Tuesday , October 23 2018
ہوم > کالم > وضو … مبشر علی زیدی

وضو … مبشر علی زیدی

’’مغرب کا وقت ہو رہا ہے۔
مسجد میں جماعت ہو چکی ہوگی۔
کیا میں وضو کر کے یہاں نماز پڑھ لوں؟‘‘
میں نے دوست سے اجازت طلب کی۔
ہم اس کے گھر کے ڈرائنگ روم میں بیٹھے تھے۔
’’نہیں، مسجد ہی چلتے ہیں۔‘‘
دوست نے اصرار کیا۔
میں راضی ہو گیا۔
راستے میں پوچھا،
’’گھر میں نماز پڑھنے میں کیا مسئلہ تھا؟‘‘
دوست نے ہچکچاتے ہوئے کہا،
’’دراصل پانی کی موٹر زیادہ بجلی کھاتی ہے۔
بل بہت بڑھ جاتا ہے۔
ہم نے اسے کنڈے پر ڈال رکھا ہے۔
چوری کی بجلی سے کھینچے گئے پانی سے وضو نہیں ہوتا۔‘‘

یہ بھی دیکھیں

حضرتِ حسین اور ہم۔۔۔مجاہدبخاری

تاریخ کی ایک خوبی ہے کہ وہ انسان کو اسکا اصل یاد دلائے رکھتی ہے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *