Friday , October 19 2018
ہوم > کالم > آہ !! غریب کی مریم۔۔۔

آہ !! غریب کی مریم۔۔۔

سیکیورٹی ادارے وطن عزیزمیں آپریشن ’رد ا لفساد‘میں برسرپیکارہیں۔۔ حکمرانوں نے بھی لانچ کررکھا ایک آپریشن۔۔۔ ’ردالانصاف‘۔۔

یہ ہے مہجورومقہورعوام کے خلاف ۔۔دادرسی کے نام پرداداگیری،، درددل کادعویٰ ۔۔اپنے دل کادردلے کے بیٹھ جاتے ہیں،،خدامت کی مشہوری ہے،ندامت جھولی ڈال رہے ہیں۔۔

طاقت کاتوازن اسی صورت قائم رہ سکتاجب قانون بالادست ہو۔افلاطون نے شائد ہمارے قانون کی ہی تعریف کی تھی۔۔ ” قانون مکڑی کاوہ جالاہے جس میں کیڑے مکوڑے توپھنستے ہیں مگربڑے جانوراسے پھاڑکرنکل جاتے ہیں“ ظالم کوداد اورمظلوم کامذاق،، ہمارے ہاں کچھ ایساہی ’سکہ رائج الوقت‘ ہے۔۔

دانش سکول چشتیاں میں سیکنڈایئرکی طالبہ سدرہ شہاب پرظلمت کی داستان ’حرف غلط‘ کی طرح مٹتی نظرآرہی ہے۔۔16فروری کویتیم بچی ظلم وبربریت کانشانہ بنی ،آدھ ماہ گزرگیاابھی تک مقدمہ درج نہیں ہوا۔۔مجرمانہ خاموشی نہیں بلکہ ’خاموشیاں ‘ہیں۔۔دانش انتظامیہ کے ساتھ ساتھ حکومت اورحکومتی اداروں کوبھی چپ لگی ہے۔۔میڈیا،سوشل میڈیاپرآوازاٹھی تورانامشہودجاگے یاانہیں جگایاگیا۔۔سرکاری خزانے کامنہ کھلتاہے اورمظلومہ کے بھائی کوملتی ہے50ہزارکی صورت میں زباں بندی۔۔

یتیم سدرہ کی دونوں ٹانگیں،جبڑااورریڑھ کی ہڈی کے پانچ فریکچر۔۔”گھرکی ہسپتال“ لے جاکرمیڈیاسے دوررکھنے کی کوشش ہوئی۔۔ ظلم کے پردے میں کچھ ”ستم“ بھی لپٹے ہیں اورخدشہ ہے کہ شائدہی مظلومہ کی ’ردائے عفت‘محفوظ رہی ہو۔۔ سارے حقائق اسی صورت سامنے آسکتے تھے اگرمقدمہ درج کرلیاجاتا۔۔دانش سکول انتظامیہ نے توکیاکمال۔۔ ’نام نہاد‘انکوائری ڈرامے کابندکمرے میں ہی ہوتاہے ڈراپ سین۔۔ ”سدرہ شہاب سیڑھیوں سے پھسلی ہے“۔۔چندلمحوں کے لئے اسے درست بھی مان لیاتوکیاریڑھ کی ہڈی چورابن جاتی؟؟ ٹانگیں، جبڑاچورچورہوجاتا؟؟اقتدارواختیارکے پردے میں یہ ظلم چھپنے نہیں دیاجائے گا۔۔ انکوائری اور”نوٹس لینے“ کی حقیقت سے توہرباشعورواقف ہے ،نہ جانے کیوں پھروعدوں ، دعووں کی زنجیرمیں بندھ جاتے ہیں۔۔ پھریقین کی بساط پر!!! ہم بہت اعتماد سے ہارے سرکاری ہسپتالوں میں دیکھ بھال کوسب بھانپ چکے،اس خدشہ کے پیش نظرکہ کہیں شفایاب نہ ہوجائے!! عام آدمی کے لئے تو ڈسپرین بھی ’ٹھیکے‘پربنوائی جاتی ۔۔ اگردوسری جانب دیکھیں توقومی خزانے پرشائدصاحب اقتدارکازیادہ حق ہے،کیڈٹ کالج کے مضروب طالبعلم کابیرون ملک علاج،، کچھ عرصہ قبل خاتون اول بیگم کلثوم نوازکے پاوں میں موچ آئی جس کاعلاج لندن میں ہوا۔۔۔مریم نوازکی سکن کامسئلہ ہوتودیارغیرکارخ کیاجاتاہے۔۔پھر سدرہ شہاب کاکیاجرم ہے ؟پہلے ظلم،اب ستم پہ ستم۔۔۔ یتیم سہی ۔۔مگر۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔وہ بھی اپنے باباکی ”مریم“ ہے ۔۔

یہ بھی دیکھیں

حضرتِ حسین اور ہم۔۔۔مجاہدبخاری

تاریخ کی ایک خوبی ہے کہ وہ انسان کو اسکا اصل یاد دلائے رکھتی ہے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *