ہوم > کالم > گونواز،گوزرداری۔۔مشرف کانعرہ بھی سن لیجیے۔۔۔۔تحریر/فاطمہ فیاض

گونواز،گوزرداری۔۔مشرف کانعرہ بھی سن لیجیے۔۔۔۔تحریر/فاطمہ فیاض

سورج توسوانیزے پرہے ہی مگراس کیساتھ ساتھ جوسیاسی درجہ حرارت دن بدن اوپرجارہاہے یہ بھی ماحولیاتی تبدیلیوں کی طرح سیاسی تبدیلیوں کی طرف ایک اشارہ لگ رہاہے،عمران خان نے”گونوازگو”کاایسانعرہ متعارف کرایاجوآج گلی محلوں میں شغل کے طورپربھی استعمال ہورہاہے اوراس نعرے کی مقبولیت ایسی ہوئی کہ بلدیاتی الیکشن کے دوران نون لیگ کی ہی ایک رہنماکے منہ سے بے ساختہ “گونوازگو”نکل گیاجس پرانہیں خاصی شرمندگی بھی اٹھاناپڑی،نعرہ  بے شک یہ عمران نے متعارف کرایامگراب یہ سوائے نون لیگ کے ہرکسی کانعرہ بن چکاہے،یہ الگ بات ہے کہ ابھی تک نوازشریف اس نعرے کی پرواہ کیے بغیراپنی مدت پوری کرنے کے قریب ہیں۔۔لیگی کارکنوں نے بھی “گالی کے جواب میں گالی”کے مترادف،”روعمران رو”کانعرہ لگایامگراس نعرے نے کچھ خاص مقبولیت حاصل نہیں کی،یہ صرف ایسی جگہوں پرہی کبھی کبھارسننے کوملتاہے جہاں پردونوں پارٹیوں کے کارکن آمنے سامنے ہوجائیں توپھرجوابی حملے کے طورپر”روعمران رو”کاوار کیاجاتاہے مگربظاہرجوپی ٹی آئی کے نعرے میں شدت محسوس کی جاتی ہے وہ نون لیگ کے نعرے میں نظرنہیں آتی۔۔۔

اب گزشتہ کل لندن میں سابق صدرپرویزمشرف نےبھی ایک پریس کانفرنس کرڈالی ہے جس میں انہوں نے اوربھی کافی معنی خیزاورتگڑی باتیں کی مگرہم انہیں موضوع بحث نہیں بنائیں گے،اس میں ہمارے آج کے موضوع کی مناسبت یہ بات دلچسپ ہے کہ پرویزمشرف نے بھی ایک نیانعرہ لگادیاہے،یہ الگ بات ہے کہ انہوں نے نعرہ  بناتے وقت تحریک انصاف کے تھیم کونقل کیاہے،”گونواز،گوزرداری” کالندن سے لگنے والانعرہ  اب دیکھتے ہیں زبان زدعام ہوتاہے یاپھر”روعمران رو”کی طرح کبھی کبھی سنائی دیتاہے،اگرتویہ نعرہ  بے ساختہ مشرف صاحب کے منہ سے نکل گیاتومحض اسے اتفاق سمجھاجاسکتاہے مگریہ بھی ہوسکتاہے کہ یہ صرف ایک نعرہ ہی نہ ہوبلکہ ایک اشارہ بھی ہوجسے بہت سے لوگ سمجھ بھی چکے ہوں گے،اب دیکھنایہ ہے کہ مشرف آگے کیاکرنے والے ہیں کیوں کہ انہوں نے اپنی پریس کانفرنس میں یہ بھی کہاہے کہ نوازشرف کو فوج سے پنگالینے کاشوق ہے۔

یہ بھی دیکھیں

کشمیر اب ہماری ترجیح نہیں رہا – بلال شوکت آزاد

کشمیر اب ہماری ترجیح نہیں رہا لیکن کشمیریوں کی اول آخر ترجیح پاکستان ہی ہے۔ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *