32

44 کروڑ کے 28 ہزار موبائل فونز کلیئر کرانے کی کوشش ناکام

کراچی: پاکستان کسٹمز اپریزمنٹ ویسٹ کلکٹوریٹ نے ریفریجریٹر پارٹس، ڈائیز اور گارمنٹس کی آڑ میں الحمد انٹرنیشنل کنٹینر ٹرمینل سے موبائل فونز ٹیبلٹس اور بیٹریاں کلیئرکرانے کی کوشش ناکام بنادی۔

ڈپٹی کلکٹراپریزمنٹ عمران رسول نے بتایا کہ کسٹمز اپریزمنٹ ویسٹ کلکٹوریٹ نے میسرز رانا انٹرپرائزز، الحمد اینڈ کمپنی اور زیونٹیکان امپیکس کی جانب سے مس ڈیکلیئریشن کے ذریعے بندرگاہ سے موبائل فونز کی کلیئرنس حاصل کرنے کی کوشش پر تحقیقات کی ہدایت کی جس پرکسٹمز حکام نے مطلوبہ کارروائی کی تو انکشاف ہواکہ 3 بل آف لیڈنگز میں ریفریجریٹرپارٹس اورگارمنٹس کی ڈیکلیئریشن کے بجائے درآمدی کنسائمنٹ میں مختلف معروف غیرملکی کمپنیوں کے28 ہزارموبائل فونز، 2700 ٹیبلٹس اور 16500موبائل فون بیٹریاں شامل ہیں جس کی مالیت کا اندازہ 44 کروڑ روپے لگایا گیا ہے اور مذکورہ کوشش کے ذریعے10کروڑ40 لاکھ روپے کی ڈیوٹی وٹیکسز بچائے جارہے تھے جب کہ حکومتی ٹیکسز بچانے کی کوشش کی وجہ سے کسٹم ایکٹ مجریہ1960کی شق168 کے تحت مذکورہ درآمدی کنسائمنٹ کو ضبط کرلیا گیا ہے۔

امکان ہے کہ مذکورہ کیس اس بڑے جعلساز گروہ سے تعلق رکھتا ہو جس نے دیگر اشیا کی آڑ میں موبائل فونزکی کلیئرنس کے ذریعے قومی خزانے کو ریونیوکی مد میں بھاری نقصان پہنچایا۔ حالیہ چند ماہ کے دوران کراچی لاہور اور ملتان میں کسٹمز نے متعدد ایسے کنسائمنٹس پکڑے ہیں تاہم تازہ ترین واقعے کی تحقیقات جاری ہے اور کسٹمزاپریزمنٹ ایسٹ کلکٹوریٹ اس جرم میں ملوث عناصر وسہولت کاروں کو پکڑے کے لیے پرعزم ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں