30

شام سےایک اوردل چیردینےوالی خبر:ظالموں نےسکول کےبچوں کوبھی نہ چھوڑا،بڑی تعدادمیں ہلاکتوں کی اطلاعات

دمشق، نیویارک‘بیروت(ویب ڈیسک ) شام کے شمال مغربی صوبے ادلب میں سکول کے قریب بمباری سے 16 بچے جاں بحق ہوگئے ،سیرین آبزرویٹری کے مطابق ابھی واضح نہیں یہ فضائی حملہ کس نے کیا ہے۔ بچے سکول سے نکل رہے تھے جب نشانہ بنایا گیا ۔اقوام متحدہ نے ایک بار پھر عالمی برادری

سے شام کے جنگ زدہ علاقے الغوطہ کے مفلوک الحال شہریوں کی بھرپور مدد کی اپیل کی ہے ایک بیان میں کہا گیا کہ نقل مکانی کرنے والوں میں 70 فیصد خواتین اور بچے ہیں ، عفرین آپریشن پر جرمنی چانسلر نے ترکی کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے بیان میں مذمت کی گئی داعش قدام قصبے پر قبضے کے دوران جو حملہ کیا اس میں شامی حکومت کے حامی 62 جنگجو مارے گئے تھے ۔ مشرقی غوطہ میں امریکی خاندان محصور ہوگیا ایک خاتون نے ٹرمپ سے مطالبہ کیا ہے ان کے لئے کچھ کیاجائے ۔ دوسری خبر کے مطابق رواں برس فروری مںر مغوی 110سکول طالبات مںا سے بوکوحرام نے 76 کو رہا کر دیا ہے ، حکام نے بتایا نائجرریا کے شمال مںی مشرقی قصبے دپکی سے انہں جنگجو یرغمال بنا کر لے گئے تھے۔ وزیر اطلاعات لائی محمود نے مڈبیا کو بتایا نائجرنین حکام اور شدت پسندوں مںس طویل مذاکرات کے بعد ان طالبات کی رہائی عمل مںو آئی ہے، ابھی رہائی کا عمل جاری ہے شاہد تمام طالبات کو حکام کے حوالے کر دیا جائے ، انتظامہی کے اہلکار بشرک ماتزو نے تصدیق کی کہ لڑکا ں بحفاظت اپنے گھروں مںر واپس آگئی ہںو۔۔۔۔۔۔۔۔۔اب پ ت۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں