Sunday , November 18 2018
ہوم > صحت > شدید گرمی کے موسم میں پنکھے کا استعمال ضرور کریں مگر ان احتیاطی تدابیر کے ساتھ ۔۔۔۔ بڑے کام کی رپورٹ سامنے آ گئی

شدید گرمی کے موسم میں پنکھے کا استعمال ضرور کریں مگر ان احتیاطی تدابیر کے ساتھ ۔۔۔۔ بڑے کام کی رپورٹ سامنے آ گئی

شدید گرمی کے موسم میں پنکھے کا استعمال ضرور کریں مگر ان احتیاطی تدابیر کے ساتھ ۔۔۔۔ بڑے کام کی رپورٹ سامنے آ گئی

لاہور (ویب ڈیسک) موسم گرم ہو جائے تو ہوا کا درجہ حرارت بھی بڑھ جاتا ہے۔ مئی سے اگست تک کا وقت پسینے اور گھٹن سے بھرا ہوتا ہے۔

گھٹن اور پسینے سے گھبراہٹ ہوتی ہے۔ ایسے میں اگر ہوا کا جھونکا مل جائے تو سکون آ جاتا ہے۔ ہوا کا یہ جھونکا پیڈسٹل فین بھی مہیا کرتا ہے۔ یہ ایسی مشین ہے جو اپنے پروں کی مدد سے ہوا کھینچ کر ہماری طرف دھکیل دیتی ہے۔ آئیں وہ گُر پڑھیں جن کی مدد سے ہم پیڈسٹل فین لمبے عرصے کے لیے ٹھیک اور چالو حالت میں رکھ سکتے ہیں۔ ۱۔ جب پیڈسٹل فین ایک جگہ سے دوسری جگہ لے کر جائیں تو کوشش کریں کہ اس کی جالی ٹیڑھی نہ ہو۔ جالی ٹیڑھی ہونے سے یہ پروں سے ٹکرا کر آواز پیدا کرتی ہے اور ہوا کو کھینچنے میں مشکل پیدا ہو جاتی ہے۔ ۲۔ پیڈسٹل فین کی موٹر کو ٹھنڈا رکھنے کے لیے ہوا سے مدد لی جاتی ہے۔ یہ ہوا فین میں موجود خاص سوراخوں سے موٹر تک جاتی ہے۔ اگر فین کو مٹی والی ہوا میں چلایا جائے تو ہوا کے ساتھ ساتھ مٹی بھی موٹر تک چلی جاتی ہے۔ اس سے موٹر گرم ہو جاتی ہے اور بیرنگ خراب ہوتے ہیں۔ کوشش کریں کہ مٹی اور دھول موٹر تک نہ پہنچے۔ ان سوراخوں کو باریک کپڑے کی مدد سے صاف کرلیں۔ ۳۔ پیڈسٹل فین کو ہمیشہ ہموار جگہ پر رکھیں تاکہ اس کے جسم اور پروں کا توازن قائم رہے۔

اگر توازن قائم نہ ہو گا تو مشین خراب ہو جائے گی اور اس کی کارکردگی میں کمی بھی ہوگی۔ زیادہ تر خرابیاں، توازن نہ ہونے کی وجہ سے پیدا ہوتی ہیں۔ ۴۔ پیڈسٹل فین میں بُش بھی استعمال ہوتے ہیں۔ اگر یہ خشک ہو جائیں تو ٹوٹ پھوٹ جاتے ہیں جس سے پنکھے کے پَر، اس طرح چلنے لگتے ہیں جیسے گاڑیوں کے پہیے ٹیڑھے چلتے ہیں۔ اس خرابی کو چَل یا پلے کہتے ہیں۔ ایسی صورت میں ان بُشوں کی مرمت یا تبدیلی ضروری ہوتی ہے۔ اگر آپ کے پیڈسٹل فین میں بھی ایسا کوئی معاملہ ہے تو اسے فوراً ٹھیک کروائیں۔ ۵۔ اگر پنکھے کو دھکا لگا کر چلانا پڑے تو اس کے کپیسٹر کو بدلیں۔ کپیسٹر ایک چھوٹا سیل نما آلہ ہے جو بجلی کو سٹور کر کے مناسب مقدار میں پنکھے کو مہیا کرتا ہے۔ ۶۔ اگر پنکھے کی رفتار کم یا زیادہ نہیں ہوتی تو اس کا ریگولیٹر بدلنے کی ضرورت ہے۔ ۷۔ اگر پنکھا چلنے سے گھِس گھِس کی آواز آئے تو اس کے بُش یا بیرنگ خراب ہو سکتے ہیں اور انہیں مناسب گریس دینے سے آواز ختم ہو سکتی ہے۔ اگر بیرنگ ٹوٹ گئے ہیں تو تبدیل کروائیں۔ ۸۔ اگر پنکھا جام ہو جائے تو اس کی اوورہالنگ کروائیں۔ مناسب گریس اور تیل سے یہ نقص دور ہو جائے گا۔ ۹۔ اگر پنکھے میں چَل یعنی پلے آ گئی ہے تو بیرنگ ہاؤس خراب ہے۔ بیرنگ ہاؤس پنکھے کا وہ حصہ ہے جس میں بیرنگ راڈ گھومتے ہیں۔ ۱۰۔ پنکھے کے پَر ٹیڑھے ہونے پر پنکھا صحیح طریقے سے نہیں گھومتا اور اس کی ہوا دینے کی طاقت کم ہو جاتی ہے۔ اگر پنکھے کے پَر ٹیڑھے ہوں تو انہیں متوازن کریں۔

یہ بھی دیکھیں

انرجی ڈرنکس بچوں کے لیے کس قدر خطرناک اور نقصان دہ ہیں ؟ ماہرین نے خبردار کر دیا

برطانیہ (ویب ڈٰیسک)برطانوی وزیراعظم کا کہنا ہے کہ انگلینڈ میں 18 سال سے کم عمر …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *