Sunday , November 18 2018
ہوم > پاکستان > ہمارا بجٹ آئی ایم ایف کا پاکستان ڈیسک منظور کرتا ہے، مولانا فضل الرحمان

ہمارا بجٹ آئی ایم ایف کا پاکستان ڈیسک منظور کرتا ہے، مولانا فضل الرحمان

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ ہمارا بجٹ آئی ایم ایف کا پاکستان ڈیسک منظور کرتا ہے۔

لاہور میں مینار پاکستان سے متصل گریٹر اقبال پارک میں ایم ایم اے کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ہماری معیشت پر آئی ایم ایف اور عالمی بینک کا قبضہ ہوتا جا رہا ہے اور ہم آئی ایم ایف کے بنائے ہوئے بجٹ کو اسمبلیوں میں پڑھ کر سنا دیتے ہیں۔

فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ یو این چارٹر، جنیوا انسانی حقوق کنوینشن ہمارے انسانی حقوق کنٹرول کر رہے ہیں، بین الاقوامی آرڈر کے تحت یہاں قانون بنایا گیا کہ 18 سال بعد جنس تبدیل کی جا سکتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ نیا قانون لایا جا رہا ہے کہ یو این کسی تنظیم یا وابستہ فرد کو دہشت گردوں کی فہرست میں شامل کر دے تو ہمیں بھی ماننا ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ آج امت مسلمہ کو جنگوں کا ایندھن بنایا جا رہا ہے، ایران اور سعودی عرب کو لڑانے کی کوشش کی جا رہی ہے اور یہ سب امریکا کی سازش ہے۔

ایم ایم اے کے صدر کا کہنا تھا کہ آج سب سے بڑا مسئلہ امن و امان کا ہے اور انسانیت کے حقوق محفوظ ہونے تک کوئی چیز امن کی ضمانت نہیں دے سکتی۔
قبل ازیں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے متحدہ مجلس عمل کے نائب صدر اور امیر جماعت اسلامی سراج الحق کا کہنا تھا کہ مینار پاکستان گواہ ہے 70 سال ہو گئے مگر اسلامی نظام نافذ نہیں ہوا لیکن آج مینار پاکستان کہہ رہا ہے کہ نیا پاکستان نہیں اسلامی پاکستان بناؤ۔

سراج الحق نے کہا کہ دینی جماعتوں کے اکٹھے ہونے پر امریکی ایجنٹ پریشان ہیں اور ہمارے پہلے ہی اجتماع کو دیکھ کر لوگوں کے رنگ اڑ گئے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ ہم ملک میں اسلامی نطام کے نفاذ کے لیے لڑیں گے اور مریں گے۔

امیر جماعت اسلامی کا کہنا تھا کہ ہم پاکستان کو پُرامن پاکستان بنانے کے لیے ایک ہوئے ہیں اور اس قافلے میں کوئی لینڈ مافیا، ڈرگ مافیا، کوئی آف شور کمپنی والا شامل نہیں ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہماری لڑائی کسی فرد اور خاندان کے خلاف نہیں بلکہ ظلم کے خلاف ہے، جو بھی ظلم کرے گا ہم اس کے خلاف کھڑے ہو جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستانی بیرون ملک سے 20 ارب ڈالر ملک بھیجتے ہیں جب کہ کرپٹ حکمران یہاں سے سرمایہ لوٹ کر باہر بھیجتے ہیں۔

سراج الحق نے کہا کہ دبئی میں کرپٹ اشرافیہ نے اربوں روپے کی پراپرٹی خریدی اور جس سیاست کا مقصد بینک اکاونٹس میں اضافہ ہو اس پر لعنت بھیجتے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

’’ کس طریقے سے سوال کیا ہے؟‘‘ تقریب کے دوران جب صحافی نے زُلفی بخاری سے سوال پوچھا تو انہوں نے کیا کِیا؟ جان کر آپ ہکا بکا رہ جائیں گے

’’ کس طریقے سے سوال کیا ہے؟‘‘ تقریب کے دوران جب صحافی نے زُلفی بخاری …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *