Monday , August 20 2018
ہوم > انٹرنیشنل > بیوی کی جانب سے خریدی گئی جائیداد کا اصل مالک کون ہوگا؟ عدالت نے تہلکہ خیز فیصلہ جاری کر دیا

بیوی کی جانب سے خریدی گئی جائیداد کا اصل مالک کون ہوگا؟ عدالت نے تہلکہ خیز فیصلہ جاری کر دیا

نئی دہلی(ویب ڈیسک)نئی دہلی کی ہائی کورٹ نے کہاہے کہ ایک شخص کو قانونی حق حاصل ہے کہ وہ اپنی جائز آمدنی سے بیوی کے نام پرجائداد(رجسٹری) خریدسکے۔اس طرح خریدی گئی جائداد بے نامی نہیں کہی جاسکتی تاہم جائداد کا مالک وہی کہلائے گا جس نے اسے اپنی آمدنی کے جائز ذرائع سے خریدی ہو نہ

کہ جس کے نام سے خریدی گئی ہو۔میڈیارپورٹس کے مطابق جسٹس والمیکی جے مہتا کے بنچ نے ایک شخص کی اپیل منظور کرتے ہوئے ٹرائل کورٹ کے اس فیصلے کو مسترد کردیا جس کے تحت اس شخص سے ان 2جائید ادوں سے حق سلب کرلیا گیا تھاجو اس نے اپنی اہلیہ کے نام سے خریدی تھی ۔ اس شخص کا مطالبہ تھا کہ ان دونوں جائدادوں پر اسے مالکانہ حقوق دیا جائے کیونکہ اس نے جائز آمدنی کے ذرائع سے خریدی تھی۔ان میں سے ایک نیو موتی نگر اور دوسری گڑگاؤں کے سیکٹر 56میں واقع ہے۔جبکہ دوسرئی جانب ایک خبر کے مطابق ائی کورٹ نے کہا کہ ایک شخص کو قانونی حق حاصل ہے کہ وہ اپنی جائز آمدنی سے بیوی کے نام پرجائداد(رجسٹری) خریدسکے۔اس طرح خریدی گئی جائداد بے نامی نہیں کہی جاسکتی ۔ ہائیکورٹ نے واضح کیا کہ جائداد کا مالک وہی کہلائے گا جس نے اسے اپنی آمدنی کے جائز ذرائع سے خریدی ہو نہ کہ جس کے نام سے خریدی گئی ہو۔جسٹس والمیکی جے مہتا کی بنچ نے ایک شخص کی اپیل منظور کرتے ہوئے ٹرائل کورٹ کے اس فیصلے کو مسترد کردیا جس کے تحت اس شخص سے ان 2جائدادوں سے حق سلب کرلیا گیا تھاجو اس نے اپنی اہلیہ کے نام سے خریدی تھی ۔ اس شخص کا مطالبہ تھا کہ ان دونوں جائدادوں پر اسے مالکانہ حقوق دیا جائے کیونکہ اس نے جائز آمدنی کے ذرائع سے خریدی تھی۔ان میں سے ایک نیو موتی نگر اور دوسری گڑگاؤں کے سیکٹر 56میں واقع ہے۔ درخواست گزار نے دعویٰ کیا کہ ان دونوں جائدادوں کا اصل مالک وہی ہے نہ کہ اس کی بیوی جس کے نام پر اس نے یہ جائداد خریدی لیکن ٹرائل کورٹ نے بے نامی ٹرانزیکشن ایکٹ 1988کےتحت درخواست گزار کے اس حق کو خارج کردیا جس کے تحت جائداد میں تبدیلی اور حصول کے حق پر پابندی عائد ہے۔ہائیکورٹ نے ٹرائل کورٹ کے جاری کردہ حکم کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ نچلی عدالت نے اس شخص کی درخواست کو ابتدائی طور پر منسوخ کرکے غلطی کردی کیونکہ اس سے متعلق حکم جب پاس کیا گیااس وقت پروہیبیشن آف بے نامی پراپرٹی ٹرانزیکشن ایکٹ1988ترمیم کے ساتھ نافذ تھا۔

یہ بھی دیکھیں

ملائیشیا میں ’جھوٹی خبروں‘ سے متعلق قانون ختم کر دیا گیا

ملائیشیا کی پارلیمنٹ نے سابق دور حکومت میں بنایا گیا جھوٹی خبروں سے متعلق قانون …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *