Wednesday , December 19 2018
ہوم > پاکستان > وزیر اعظم عمران خان کی بنی گالہ اراضی کی ریگولرائزیشن کا عمل شروع ۔۔۔ حقیقی مالک دراصل کون نکلا؟ نام جان کر آپ دنگ رہ جائیں گے

وزیر اعظم عمران خان کی بنی گالہ اراضی کی ریگولرائزیشن کا عمل شروع ۔۔۔ حقیقی مالک دراصل کون نکلا؟ نام جان کر آپ دنگ رہ جائیں گے

اسلام آباد(ویب ڈیسک) وفاقی ترقیاتی ادارہ کی انتظامیہ نے وزیر اعظم عمران خان کے زون 4 (بنی گالہ) میں موجود رہائشگاہ کی ریگولرائزیشن کے عمل کا آغاز کردیا ہے ، سی ڈی اے کے شعبہ ریجنل پلاننگ کی جانب سے عمران خان کوجاری مراسلہ میں کہا گیا ہے کہ ادارے کو

موصول دستاویزات میں مذکورہ اراضی کی ملکیت ان کے نام نہیں تاہم تازہ مصدقہ رجسٹری ،انتقال اورفرد کی کاپی سمیت قومی شناختی کارڈ کی مصدقہ کاپی اوربنی گالہ کے گھر کی ریگولرائزیشن کے عمل کی پیروی کرنے والے شخص کے نام کی’’ اتھارٹی لیٹر ‘‘ اور دیگر دستاویزات جمع کرائی جائے ،سپریم کورٹ کے احکامات کے بعدسی ڈی اے نے بنی گالہ کے غیرقانونی تعمیرات کو قانونی شکل دینے کا آغاز کردیا ۔وزیراعظم عمران خان کی جانب سے چند روز قبل ان کی رہائشگاہوں کی ضروری دستاویزات سی ڈی اے کے شعبہ ون ونڈو پر جمع کرائی گئی ہیں جس پر شعبہ ریجنل پلاننگ نے باضابطہ طور پر آئی سی ٹی زوننگ ریگولیشنز 1992کی ریگولیشن 8 (ترمیمی) اور پرویژن برائے اسلام آباد ریزیڈنشل سیکٹرز(بلڈنگ کنٹرول)زوننگ ریگولرائزیشن 2005کے تحت عمران خان کی رہائشگاہ کوریگولرکرنے کے عمل کا آغاز کردیا ۔اس حوالے سے شعبہ ریجنل پلاننگ نے عمران خان کو ایک مراسلہ تحریرکیا جس میں مذکورہ رہائشگاہ کو ریگولرکرنے کیلئے درکار مزید دستاویزات7یوم کے اندر طلب کی گئی ہیں۔مذکورہ شعبہ کی جانب سے عمران خان کی رہائشگاہ کوریگولرکرنے کیلئے جمع دستاویزات کی جانچ پڑتال کے بعد عمران خان کو جاری مراسلہ میں کہاگیا ہے کہ آپ کی جانب سے جمع کرائے گئے فرد انتقال اوردیگر کاغذات میں

مذکورہ رہائشگاہ کی مالک ”جمائمہ خان” ہیں جو کہ آپ کی ملکیت کو ظاہر نہیں کررہی تاہم فرد اور دیگر ملکیتی کاغذات کی آئی سی ٹی تحصیلدار کی جانب سے مصدقہ تازہ نقول فراہم کی جائیں ،شناختی کارڈ کی مصدقہ کاپی ،اور مذکورہ رہائشگاہ کی مالکن کی جانب سے ریگولرائزیشن کے عمل کی پیروی کرنے والے شخص کے نام کا اتھارٹی لیٹر فراہم کیا جائے ،تحصیلدار کی جانب سے بنی گالہ ہائوس کی اراضی کے فرد اور انتقال کی پرانی کاپیوں کی جگہ نئی تصدیق شدہ کاپیاں جمع کرائی جائیں ۔ ،تحصیلدار کی جانب سے بنی گالہ ہائو س کی اکلوتی ملکیت کے مصدقہ دستاویزات بھی فراہم کی جائیں جبکہ مرکزی شاہراہ سے بنی گالہ ہائوس پہنچنے کے لئے موجود راستے کا نقشہ بھی فراہم کیا جائے ،جبکہ50فٹ کی مرکزی شاہرا ہ جو کہ بنی گالہ ہائوس تک جاتی ہے اگر اس کی توسیع کرنا مقصود ہوتو اس کیلئے شاہراہ کیلئے درکار اراضی کا 50 فیصد مذکورہ ذاتی اراضی سے ”عطیہ”کرنے کا ”بیان حلفی ”بھی جمع کرایا جائے ، سی ڈی اے کے شعبہ ون ونڈو پر دستیاب فارمز ، اے ون ، اے ٹو ، بی ون اور بی ٹو کو بھی ’’ پر‘‘ کر کے جمع کرایا جائے ،سیورئج اورنکاسی آب کیلئے پلان اور دیگر دستاویزات سات یوم کے اند ر اندر جمع کرائی جائیں ۔

یہ بھی دیکھیں

پاکستان آنے والے متحدہ عرب امارات کے شہزادہ سلطان کے ساتھ خوفناک حادثہ ، تصاویر

لاہور( مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ عرب امارات سے پاکستان آئے شہزاہ سلطان ٹریفک حادثے میں شدید …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *