Monday , December 10 2018
ہوم > انٹرنیشنل > کرتار بارڈر کھلنے کا یہ مطلب نہیں کہ۔۔۔ بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے ہٹ دھرمی کی انتہا کر دی

کرتار بارڈر کھلنے کا یہ مطلب نہیں کہ۔۔۔ بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے ہٹ دھرمی کی انتہا کر دی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نریندر مودی کسی صورت سارک کانفرنس میں شرکت کیلئے پاکستان نہیں جائیں گے۔تفصیلات کے مطابق بھارتی وزیر خارجہ سشماسوراج نے پاکستان کی سارک کانفرنس میں شرکت کی دعوت ٹھکراتے ہوئے کہاہے کہ ہم سارک کانفرنس میں شرکت نہیں کریں گے ،

پاکستان نے دعوت دی لیکن ہم نے قبول نہیں کی ہے۔نئی دہلی پریس بریفنگ کے دوران بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج کا کہنا تھا کہ دوطرفہ بات چیت اور کرتار پور بارڈر دونوں مختلف معاملات ہیں، گزشتہ 20 سالوں سے بلکہ کئی سالوں سے بھارت پاکستانی حکومتوں سے کرتارپور کوریڈور کھولنے کا مطالبہ کر رہا ہے، پہلی بار کسی پاکستانی حکومت نے اس معاملے پر مثبت جواب دیا ہے تاہم بارڈر کھلنے کا مطلب یہ نہیں کہ اب دوطرفہ تعلقات کا آغاز ہو جائے گا۔بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی کرتے ہوئے کہا کہ ہم سارک کانفرنس میں شرکت کے لیے پاکستان کی جانب سے دعوت نامے پر کوئی مثبت جواب نہیں دیں گے، جب تک پاکستان بھارت میں دہشت گرد کارروائیاں بند نہیں کرتا بھارت پاکستان سے کوئی بات چیت نہیں کرے گا اور نہ ہی سارک کانفرنس میں شرکت کرے گا۔یاد رہے کہ اس سے قبل پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے سشمان سوراج کو کرتار پور راہداری کی سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب میں شرکت کی دعوت دی لیکن انہوں نے اس سے انکار کر دیا اور کہا کہ بھارت کے دو وزراءشریک ہوں گے ۔یہ پہلی مرتبہ نہیں ہے بھارت نے اس سے قبل پاکستان کی مذاکرات کی پیشکش بھی ٹھکرا دی تھیواضح رہے کہ کرتارپور کوریڈو کے سنگ بنیاد کی تقریب کی تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں، وزیراعظم عمران خان آج کرتارپور کوریڈور کا سنگ بنیاد رکھیں گے جب کہ تقریب میں پاک بھارت سمیت دنیا بھر سے سکھ یاتری شرکت کریں گے

یہ بھی دیکھیں

امریکہ اور اسکے پرانے باشندے : امریکہ کی دریافت کے حوالے سے معلومات سے بھر پور ایک دلچسپ تحریر

لاہور(ویب ڈیسک) کیا امریکا وایکنگز نے دریافت کیا؟ اس سوال کی تہیں کھولنے کی ضرورت …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *