21

سروسز ہسپتال میں آپریشن کے دوران ریپ کا ا لزام لگانے والی خاتون کی اصلیت کیا نکلی؟

لاہور( ویب ڈیسک)سروسز ہسپتال میں خاتون سے بداخلاقی کے واقعہ میں نیا موڑ ۔ خاتون کے جھوٹا ثابت ہونے کے حوالے سے ڈاکٹرز کا دبنگ موقف سامنے آ گیا ۔ لاہور کے ینگ ڈاکٹرزمقدمہ خارج نہ ہونے کیخلا ف میدان میں آگئے، اور ہڑتال کر دی جس کے باعث گزشتہ روز تمام آپریشن ملتوی کردیئے گئے

ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر محمود الحسن اور پنجاب کے سینئر نائب صدر ڈاکٹر عاطف چوہدری نے مقدمہ واپس نہ لئے جانے پر کل بروز جمعرات آؤٹ ڈ ور اور آپریشن تھیٹرز میں ڈاکٹروں کے کام نہ کرنے کا بھی اعلان کر دیا، اس حوالے سے رہنماؤں نے کہا آپریشن تھیٹر کے اندر خاتون سے ز یا دتی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ،الزام لگانے والی خاتون کو ڈاکٹرز کیخلاف استعمال کیا گیا ہے جو ایک سازش ہے اور بے نقاب ہو گئی ہے کیونکہ تحقیقاتی رپو ر ٹ اور ایگزامینیشن بورڈ میں خاتون سے زیادتی کا واقعہ جھوٹا ثابت ہوا ہے بعض ٹی وی چینلز نے جھوٹی رپورٹنگ کی اور جھوٹی خبریں شائع کیں ۔ ینگ ڈاکٹرز نے مطالبہ کیا کہ جھوٹے اور شرمناک مقدمے سے ڈاکٹروں کی ساکھ متاثر ہوئی جھوٹا مقدمہ درج کرنیوالے پولیس افسروں کیخلا ف کارروائی کی جائے اور مقدمہ خارج کیا جائے ورنہ آج بھی ہسپتالوں میں کام نہیں کریں گے، اس واقعے کیخلاف ڈاکٹرز آج ہڑتال اور سڑکوں پر احتجاجی مظاہرے کریں گے حکومت کو 24 گھنٹے کی ڈیڈ لائن دیتے ہیں اگر مقدمہ خارج نہ کیا گیا تو احتجاج کو پورے پنجاب تک وسیع کر دیں گے ۔ حکومت کو 24 گھنٹے کی ڈیڈ لائن دیتے ہیں اگر مقدمہ خارج نہ کیا گیا تو احتجاج کو پورے پنجاب تک وسیع کر دیں گے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں