Monday , December 10 2018
ہوم > پاکستان > مرغی فارمولے پر مذاق اڑانے والوں سنو۔۔۔۔وزیر اعظم عمران خان نے غلامانہ ذہنیت رکھنے والوں کو کرارا جواب دے دیا

مرغی فارمولے پر مذاق اڑانے والوں سنو۔۔۔۔وزیر اعظم عمران خان نے غلامانہ ذہنیت رکھنے والوں کو کرارا جواب دے دیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے مرغیوں اور انڈوں کے ذریعے معیشت کی بہتری کی اپنی تجویز پر تنقید کے جواب میں مائیکروسافٹ کے بانی بل گیٹس کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ‘دیسی’ لوگ مرغی کے ذریعے غربت کے خاتمے کی بات کریں تو غلامانہ ذہنیت والے مذاق اڑاتے ہیں،

لیکن جب ‘ولایتی’ یہی بات کریں تو وہ شاندار کہلاتا ہے۔واضح رہے کہ دو روز قبل وزیراعظم نے کنونشن سینٹر اسلام آباد میں حکومت کی 100 روزہ کارکردگی کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ دیہاتی خواتین مرغیوں اور انڈوں کے ذریعے غربت کا خاتمہ کرسکتی ہیں۔انہوں نے تجویز پیش کی تھی کہ حکومت دیہاتی خواتین کو مرغیاں اور انڈے فراہم کرے گی، جس سے وہ اپنا پولٹری کا کاروبار کر سکیں گی۔وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ اس منصوبے کی آزمائش ہوچکی ہے، حکومت دیہاتی خواتین کو مرغیوں کے لیے غذائی انجیکشنز بھی فراہم کرے گی تاکہ مرغیاں جلد صحت مند ہوسکیں۔واضح رہے کہ 2016 میں مائیکروسافٹ کے بانی اور دنیا کے امیر ترین شخص بل گیٹس نے غربت سے نمٹنے کے لیے ‘مرغیاں پالو اور غربت مٹاؤ’ نامی ایک منصوبے کا اعلان کیا تھا، جس کے تحت برکینا فاسو اور نائیجیریا سمیت مغربی افریقی ممالک کو ایک لاکھ چوزے عطیہ کیے جانے تھے۔اگرچہ وزیراعظم عمران خان اور بل گیٹس کا یہ غربٹ مٹاؤ ماڈل ایک جیسا ہی معلوم ہوتا ہے، لیکن عمران خان کے اس بیان کو سوشل میڈیا پر بہت تنقید اور مذاق کا نشانہ بنایا گیا۔ حتیٰ کہ لوگوں نے اسے ‘مرغی معیشت’ اور’انڈہ اکانومی’ کا بھی نام دے ڈالا۔اسی تنقید کے بعد وزیراعظم عمران خان خود میدان میں آئے اور اپنے ٹوئٹر پیغام میں تنقید کرنے والوں کو جواب دے ڈالا۔

عمران خان نے بل گیٹس کے پولٹری فارمنگ کے ذریعے غربت مٹانے کے منصوبے سے متعلق ایک بلاگ شیئر کیا اور ‘غلامانہ ذہنیت رکھنے والوں’ کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا کہ ‘نوآبادیات سے متاثر (غلامانہ) ذہنوں کو مرغبانی کے ذریعے غربت کے خاتمے کا خیال مضحکہ خیز دکھائی دیتا ہے مگر جب “گورے” دیسی مرغیوں (مرغبانی) کے ذریعے غربت مٹانے کی بات کرتے ہیں تو اسے “خیالِ نادر” قرار دیکر یہ عش عش کراٹھتے ہیں۔اس سے قبل پاکستان تحریک انصاف نے بھی وزیراعظم کے مرغیوں اور انڈوں سے متعلق بیان کو مائیکروسافٹ کے بانی بل گیٹس کے نظریے سے مشابہہ قرار دیا تھا۔پی ٹی آئی نے بھی اپنی ٹوئٹر پوسٹ میں بل گیٹس کا 2016 میں لکھا گیا وہی بلاگ شیئر کیا، جس میں انہوں نے لکھا تھا کہ ’مرغیاں پالنا مکمل طور پر خواتین کی سرگرمی ہے کیونکہ یہ پورے دن گھر کے اردگرد رہتی ہیں، ان کا خیال رکھنا آسان ہے اور یہ سستی ہوتی ہیں، یہ خواتین کو خود مختار بنا سکتی ہیں تاکہ وہ اپنی کمیونٹی میں کاروباری کردار ادا کرسکیں‘۔ پی ٹی آئی کی جانب شیئر کی گئی ایک اور پوسٹ میں بتایا گیا تھا کہ بل گیٹس نے افریقا کے انتہائی غریب ملکوں کی مدد بھی مرغیوں کے ذریعے سے کی لیکن جب وزیراعظم عمران خان نے یہ بات کی تو یہ مسئلہ بن گیا۔مزید کہا گیا کہ پروپیگنڈا کرنے والے اپنی نفرت سے آگے نہیں بڑھ سکتے۔ سلمان سکندر نامی صارف نے عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا میری مرغی نے آج انڈا نہیں دیا گزارش ہے کہ انہیں انجیکشن دے دیں‘۔تصور اشرف لکھتے ہیں کہ انڈے، مرغیاں اور مزید انڈے یہ کیا بکواس ہے، گزارش ہے کچھ ایسی حکمت عملی اختیار کریں جو غریبوں کو جینے دیں‘۔

یہ بھی دیکھیں

تلور اور مور کے شکا ر اور گوشت کا جنون : بھارتی صوبہ راجھستان کے اکثر خاندان لاولد کیوں رہ جاتے ہیں ؟ دنگ کر ڈالنے والے حقائق پر مبنی ایک انوکھی تحریر

لاہور (ویب ڈیسک) کسی زمانہ میں افغانستان بھی تَلَور کے غیر ملکی شکاریوں کا پسندیدہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *