1

ایجاد کرنے والے برائن ایکٹن کی کہانی Whatsapp

دو ہزار نو کے بیچ میں برائن ایکٹن کو کوئی بھی کمپنی جاب دینے سے کترا رہی تھی۔ براین ایکٹن نے ایک درجن سال پہلے ’ایپل‘ اور’ یاہو‘ جیسی بڑی بڑی کمپنیوں میں لگائے تھے۔ اتنا بہترین پورٹ فولیو ہونے کے باوجود اس کو فیس بک اور ٹویٹر نے اپنے ہاں جاب

دینے سے انکار کر دیا۔ برائن نے ہمت نہیں ہاری بلکہ یاہو کے دور کے ایک اور کولیگ کے ساتھ مل کر اپنی کمپنی کھولی۔ اس نے اپنے ساتھی جین کوم کے ساتھ مل کر واٹس ایپ بنا ڈالی۔ واٹس ایپ ایک ایسی ایپلیکیشن ہے جو دنیا بھر کے بچے بڑے یکساں استعمال کر رہے ہیں۔واٹس ایپ کی کل ورتھ انیس بلین ڈالر ہے اور بعد میں وہی فیس بک جو برائن کو جاب نہیں دے رہی تھی، اس نے واٹس ایپ کی کامیابی دیکھ کر اس کو خرید لیا۔ آج برائن کی اپنی ورتھ تین اشاریہ آٹھ ڈالر سے زائد ہے۔ دنیا بھر برائن کے نام سے واقف ہے۔ جس وقت اسکو فیس بک اور ٹویٹر نوکری نہیں دے رہے تھے، اس وقت اگر برائن ہار مان کر بیٹھ جاتا تو آج ہم سب ایک ایسی دنیا میں زندگی گزار رہے ہوتے جہاں واٹس ایپ نام کی کوئی ایپ نہ ہوتی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں