37

معروف صحافی ’ رضوان رضی ‘ کو دراصل کیوں گرفتار کیا گیا؟ ایف آئی اے گرفتاری کی ایسی وجہ بتا دی کہ صحافتی حلقوں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی

لاہور(نیوز ڈیسک) ایف آئی اے نے سینئر صحافی رضوان رضی کی گرفتار ی کی تصدیق کردی ہے، ڈائریکٹر ایف آئی اے کا کہنا ہے کہ رضوان رضی کو سائبر کرائم ونگ نے گرفتار کیا ہے، رضوان رضی کو اداروں کے خلاف سوشل میڈیا پر ٹویٹ کرنے پر گرفتار کیا گیا ہے۔ میڈیا ر


رپورٹس کے مطابق سینئر صحافی رضوان رضی داداکو ایف آئی اے سائبر کرائم سیل نے گرفتار کیا ہے۔رضوان رضی کو سوشل میڈیا پر حکومت اور اداروں کے خلاف ٹویٹ کرنے پر گرفتار کیا گیا ہے۔ذرائع ایف آئی اے کا کہنا ہے کہ رضوان رضی کو پہلے بھی گرفتار کیا گیا لیکن ان کی جانب سے یقین دہانی کروانے پر انہیں رہا کردیا گیا تھا۔ایف آئی اے نے رضوان رضی کی گرفتاری کی تصدیق بھی کردی ہے۔ڈائریکٹرایف آئی اے محمد عثمان کا کہنا ہے کہ رضوان رضی کیخلاف مقدمہ بھی درج کرلیا گیا ہے۔مقدمے کے اندراج کے بعد ان کو گرفتار کیا گیا ہے۔ رضوان رضی بہت جلد عدالت میں پیش کرکے ریمانڈ بھی حاصل کیا جائے گا۔ واضح رہے رضوان رضی کو ان کی رہائشگاہ جوہرٹاؤن سے گرفتار کیا گیا تھا۔ دوسری جانب سینئر صحافیوں نے رضوان رضی کواس طرح اٹھائے جانے پر اظہار تشویش کیا ہے۔ صحافی برادری نے اغواء کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حکومت رضوان رضی دادا کو فوری بازیاب کروائے۔صحافیوں کی جانب سے آج تین بجے رضوان رضی کے حق میں احتجاجی مظاہرہ بھی کیا جائے گا۔ سینئیر صحافی عمار مسعود کا کہنا تھا کہ رضی دادا کو جس بہیمانہ طریقہ سے اغوا کیا گیا ہے یہ اس پر حکومت کی خاموشی مجرمانہ ہے۔ سینئیر صحافی رضا رومی نے بھی ٹویٹ کیا ہے اور کہا ہے کہ اپنی رائے کا اظہار کرنے کا حق سب کو ہوتا ہے۔کیا ان کی غطی صرف ٹی وی پر بیٹھ کر تنقیدی تجزیے اور ٹویٹس کرنا ہیں ہیں؟ یہ آزادی اظہار رائے پر حملہ ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں