8

کراچی : قتل ہونے والی معروف ماڈل گرل رُباب کے قتل میں اہم پیشرفت ۔۔ ۔ کس نے دردناک انداز موت کے گھاٹ اتار ا؟ افسوسناک انکشاف

کراچی(ویب ڈیسک )کراچی کی ماڈل گرل رباب کو زہریلی دوا دیکر قتل کرنے کے الزام میں پولیس نے ایک نرس اور اس کے اسسٹنٹ کو گرفتار کرلیا ہے، دوہفتے قبل رباب کی لاش موچکوکے قبرستان کے قریب برآمد ہوئی تھی، ایس پی کیماڑی ارم اعوان کے مطابق ملزمان نے ابتدائی تفتیش میں بتایا ہے

کہ رباب حاملہ تھی اور اس کا ایک نرس کے ذریعے علاج کیا جارہا تھا تاہم زہریلی دوا سے وہ ہلاک ہوگئی بعد ازاں اس کی لاش موچکو کے علاقے میں پھینک دی گئی، جسے پوسٹ مارٹم کے بعد ورثا کے حوالے کردیا گیا تھا، نرس اور اس کے اسسٹنٹ کی گرفتاری کے بعد ایک اور شخصیت کی گرفتاری کے لئے پولیس ٹیم اسلام آباد روانہ کردی گئی ہے۔واضح رہے کہ کراچی میں پر اسرا طور پر جاں بحق ہونے والی ماڈل ماڈل رباب عرف ہانی زیدی کیس میں اہم پیشرفت ہوئی ہے۔ پولیس نے واقعہ کو ’قتل‘ قرار دیتے ہوئے نرس سمیت دو افراد کو گرفتار کرلیا۔پولیس کا کہنا ہے کہ اسقاط حمل کے دوران ماڈل کا غلط علاج کیا گیا جس کے باعث اس کی موت واقع ہوگئی جس پر ملزمان نے اس کی لاش موچکو میں لے جاکر پھینک دی۔پولیس نے مبینہ قتل میں ملوث نرس سمیت 2 افرادکوگرفتارکرلیا ہے جبکہ رباب کےدوست کی تلاش میں ٹیم اسلام آباد جائے گی۔رباب ہانی زیدی 11 فروری کو اومان سے واپس کراچی آئی تھی۔ کچھ دن بعد 22 فروری کو موچکو سے اس کی لاش ملی۔ پولیس نے ابتدائی طور پر زیادہ منشیات کے استعمال کو موت کی وجہ بتائی ہے لیکن مقتولہ کے گھر والوں نے پولیس کا موقف مسترد کرتے ہوئے کہا کہ مقتولہ منشیات استعمال نہیں کرتی تھی اہل خانہ نے مقتولہ کے دوست عمر پر قتل کا الزام عائد کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ پولیس اس کو گرفتار کرکے تفتیش کرے۔مقتولہ کی بہن کا کہنا تھا کہ میں رباب عمر کیساتھ بلیو رنگ کی گاڑی میں گئی تھی۔ عمر اسکا بہت قریبی دوست تھا لیکن جنازے میں نہیں آیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں