13

’’ حکومت کی پہلی اور سب سے بڑی وکٹ گر گئی ‘‘

اسلام آباد(نیوز ڈیسک )بلاول بھٹو کے ترجمان مصطفی نواز کھوکھر نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی کے مطالبے پرحکومت کی پہلی وکٹ اڑگئی، حکومت کی مزیدوکٹیں بھی جلدگرجائیں گی۔وزیر خزانہ اسد عمر کے وزارت چھوڑنے کے اعلان پر بلاول بھٹو کے ترجمان مصطفی نواز کھوکھر نے ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ پیپلزپارٹی کے مطالبے پرحکومت کی پہلی

وکٹ اڑگئی،حکومت کی مزیدوکٹیں بھی جلدگرجائیں گی،انہوں نے کہا کہ حکومتی ٹیم 50 اوورزسے بہت پہلے پویلین لوٹ جائےگی۔مصطفی نواز کھوکھر نے عمران خان ملک تو کیا اپنی ٹیم اور حکومت ہی نہیں سنبھال پا رہے، سلیکٹ وزیراعظم سے نہ معیشت چل رہی ہے اور نہ خارجی امور چلا پا رہے ہیں، عمران خان نے ملک کو بدترین بحرانوں میں دھکیل دیا ہے، معاشی بحران کے بعد ملک میں گورننس کا بدترین بحران پیدا ہو گیا۔یاد رہے کہ وزیرخزانہ اسدعمرنے کابینہ سے علیحدگی کا اعلان کردیااوروزیراعظم عمران خان کے نئے پاکستان بنانے کیلئے امیدظاہر کی۔ اطلاعات ہیں کہ کچھ دیر میں پریس کانفرنس کریں گے ۔اسدعمر کی کابینہ سے علیحدگی کے بعد جب وزیراعظم کے بیک اپ پلان اور متبادل کے بارے میں نجی ٹی وی چینل نے حامد میر سے سوال کیا تو ان کاکہناتھاکہ ”مجھے نہیں پتہ ، وزیراعظم سے پوچھیں“۔حامد میر کاکہناتھاکہ ’ہمیں ایک ڈیڑھ ماہ سے ا ن تبدیلیوں کا پتہ تھا،اسد عمرپر کابینہ کے مختلف ساتھی وزرا تنقید کرتے تھے ، وزیراعظم کی موجودگی میں بھی کافی بحث ہوچکی ہے اور ہم اپنے پروگرامز اور کالموں کے ذریعے یہ بتابھی چکے ہیں کہ زیرعتاب ہیں، کل شام تک ہمیں یہ نہیں پتہ تھا کہ اسد عمر علیحدگی کیلئے رضامند ہیں یا نہیں ۔ایک اورسوال کے جواب میں حامد میر نے بتایاکہ اسدعمر کی تبدیلی کی بہت سی وجوہات ہیں اور معاشی پالیسیوں کی بجائے پارٹی کی اندرونی سیاست زیادہ وجہ ہے ۔ حامد میر کاکہناتھاکہ تحریک انصاف کے اندر بھی گروپ بندی موجود ہے ، ایک گروپ شاہ محمود قریشی اور دوسرا جہانگیرترین کاحمایت

یافتہ ہے اور اس وقت دونوں گروپوں کی آپسی لڑائی عروج پر ہے ، اسد عمر کا تعلق بھی جہانگیرترین مخالف گروپ سے ہے ۔ خیال ر ہے کہ وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے وزارت خزانہ کا قلمدان چھوڑنے کا اعلان کرتے ہوئے عمران خان کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا ہے اور یقین ظاہر کیا ہے کہ وزیراعظم نیا پاکستان بنائیں گے۔اسد عمر نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے پیغام میں کہا کہ ”کابینہ میں ردوبدل کے سلسلے میں وزیراعظم چاہتے ہیں کہ میں وزارت خزانہ چھوڑ کر وزارت توانائی کا قلمدان لے لوں لیکن میں نے وزیراعظم کو اعتماد میں لیا ہے کہ میں کابینہ کا مزید حصہ نہیں رہوں گا، میرا یقین ہے کہ عمران خان پاکستان کیلئے امید ہیں اور نیا پاکستان بنائیں گے۔“واضح رہے کہ گزشتہ کچھ ہفتوں سے الیکٹرانک اور سوشل میڈیا پر یہ خبریں گردش کر رہی تھیں کہ وزیراعظم اسد عمر کی کارکردگی سے خوش نہیں ہیں اور انہیں عہدے سے ہٹانا چاہتے ہیں لیکن اب اسد عمر نے خود ہی اس بات کا اعلان کر دیا ہے کہ وزیراعظم کی خواہش ہے کہ میں وزارت توانائی کا قلمدان سنبھالو، لیکن میں ایسا نہیں کر سکتا اور اب کابینہ کا مزید حصہ نہیں رہوں گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں