26

پاکستانی روپے کا زبردست کم بیک ۔۔۔ڈالر اچانک سستا ہوگیا

کراچی ( نیوز ڈیسک )ملک میں ہر طرف مہنگائی کا طوفان برپا ہے جس نے عوام کی مشکلات میں مزید اضافہ کر دیاہے تاہم آج ڈالرکی قدر میں معمولی کمی واقع ہوئی ہے جس کے بعد انٹر بینک میں ڈالر 141 روپے 29 پیسے کا ہوگیا ہے ۔نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق انٹر بینک اور

اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قدر میں 10 پیسے کمی واقع ہوئی ہے جس کے بعد انٹر بینک میں ڈالر 141 روپے 29 پیسے جبکہ اوپن مارکیٹ میں 142 روپے 20 پیسے پر فروخت ہو رہاہے ۔اس کے علاوہ دوسری جانب سٹاک مارکیٹ میں بھی آج منفی رجحان چھایا رہا اور کاروبار آج 36 ہزار 547 پوائنٹس پر بند ہو گیاہے ۔سٹاک مارکیٹ میں کاروبار کا آغاز ہوا تو 100 انڈکس 36 ہزار 784 کی سطح پر تھا تاہم اس میں کچھ دیر معمولی اضافہ ہوا اور 36 ہزار 857 کی سطح پر پہنچ گیا لیکن اس کے بعد سٹاک مارکیٹ میں منفی رجحان رہا اور مزید اوپر جانے میں کامیاب نہیں ہو پایا ۔سٹاک مارکیٹ کے 100 انڈیکس میں کاروبار236 کی کمی کے بعد 36 ہزار 547 پوائنٹس پر بند ہوا ۔ دوسری جانب راہنما پیپلزپارٹی خورشید شاہ نے کہاہے کہ دعویٰ سے کہہ سکتا ہوں اگر سیاست دان خود مختار ہوں تو معیشت 3 سال میں آسمان پر چلی جائے گی. اسلام آباد میں صحافیوں سے گفتگو میں خورشید شاہ نے کہا کہ صدارتی نظام سے پاکستان دو لخت ہوا، ٹیکنو کریٹ کی حکومت کو مسلسل ناکامیاں ہوئیں، پاکستان کی ترقی کے لیے سیاستدان کے سوا کوئی راستہ نہیں، سیاستدانوں کو خود مختاری ملنی چاہیے، دعویٰ ہے کہ سیاست دان خود مختار ہو تو معیشت 3 سال میں آسمان پر چلی

جائے گی.انہوں نے کہا کہ 40 سے 45 سال تک صدارتی نظام رہا اور معیشت تباہ ہوئی، جب جب سویلین وزیر خزانہ آئے تو معیشت بہتر ہوئی، بطور وزیر خزانہ لیاقت علی خان، ڈاکٹر مبشر اور یاسین وٹو کا بجٹ تاریخ میں بہتر رہا تاہم اس ملک کی تباہی اس وقت شروع ہوئی جب ڈاکٹر محبوب الحق کی ڈاکٹرئن آ گئی. خورشید شاہ نے کہا کہ عمران خان کی حکومت رہے گی یا نہیں، غیر یقینی باتیں نہیں کرنا چاہتا، کرپشن میں ملوث وزرا عمران خان کی کابینہ میں کیسے اور کیوں آئے، تحریک انصاف کے رہنما بھی اب یہ پوچھنا شروع ہو گئے ہیں.انہوں نے کہا کہ بجٹ اپوزیشن کی مشاورت سے تیار کیا جانا چاہیے، پیپلز پارٹی اپنے دور حکومت میں بجٹ پر (ن) لیگ سے مشاورت کرتی رہی، نون لیگ نے صرف 2013 کے بجٹ میں مشاورت کی، تحریک انصاف نے 3 بجٹ پیش کیے لیکن مشاورت نہیں ہوئی، تحریک انصاف کا بجٹ چند لوگوں کو فائدہ پہنچانے کے لیے ہو گا. مشیر خزانہ حفیظ شیخ سے متعلق سوال پر خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ حفیظ شیخ پیپلز پارٹی میں تھے تو اسی کی پالیسی پر عمل پیرا تھے، اب تحریک انصاف کی پالیسی کے مطابق بجٹ آئے گا، تاریخ میں پہلی بار اپوزیشن نے حکومت کو آئی ایم ایف کے پاس جانے کا مشورہ دیا،حکومت ستمبر میں آئی ایم ایف کے پاس جاتی تو ڈالر 130 پر ہوتا، اب ڈالر 150 تک پہنچ گیا، غلط پالیسیوں سے نقصان ہو رہا ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں