1

کھودا پہاڑ نکلا چوہا : بھارتی ہیلی کاپٹر تباہ ہونے کا ڈراپ سین ۔۔۔ تحقیقاتی رپورٹ میں بڑا انکشاف سامنے آگیا

نئی دہلی (ویب ڈیسک) بھارتی ایئر فورس کا ہیلی کاپٹر اپنے ہی میزائل کا نشانہ بن کر گرا، انکوائری رپورٹ کے مطابق میزائل داغنے کے 12 سکینڈ بعد ہیلی کاپٹر کو جا لگا جس سے پانچ اہلکار ہلاک ہو گئے تھے۔ نجی ٹی وی نیوز چینل کے مطابق 27 فروری کو پاکستان کی جانب سے

بھارتی فضائیہ کے دو لڑاکا طیارے مار گرائے جانے کے دوران بھارتی ایئر فورس نے غلطی سے اپنے ہی ہیلی کاپٹر کو نشانہ بنایا جو گر کر تباہ ہو گیا تھا۔اس واقعے کی انکوائری رپورٹ تیار ہو چکی ہے جس کے مطابق ہیلی کاپٹر پر داغا جانے والا میزائل سری نگر ایئر بیس سے فائر کیا گیا تھا، تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق میزائل سسٹم پاکستان طیاروں کے لیے ہائی الرٹ تھا۔ تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق بھارتی میزائل سسٹم پاکستانی طیارے اور اپنے ہیلی کاپٹر میں تمیز نہ کر سکا اور بد حواسی کے عالم میں فیکٹ چیکنگ کیے بغیر ہی میزائل چھوڑ دیا گیا۔ ہیلی کاپٹر کو نشانہ بنانے والا میزائل سسٹم بھارتی ائیر فورس کا جدید ترین سسٹم ہے۔ دوسری طرف بھارتی وزارت دفاع نے غلطی سے اپنے ہی Mi-17ہیلی کاپٹر کو میزائل سے تباہ کرنے والے انڈین ایئر فورس کے آفیسر کے خلاف فوجداری قوانین کے تحت کارروائی کا فیصلہ کرلیا ہے۔ بھارتی خبر رساں ادارے کے مطابق سری نگر میں تباہ ہونے والے ہیلی کاپٹر کے ذمہ دار کیخلاف مجرمانہ غفلت برتنے پر محکمانہ تادیبی کارروائی کا فیصلہ کیا ہے، یہ کارروائی فوجداری قوانین کے تحت کی جائے گی۔ اس سلسلے میں ممکنہ آئینی اقدامات اور قوانین پر غور کیا جا رہا ہے۔ کورٹ آف انکوائری کی انویسٹی گیشن کی ابتدائی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا تھا کہ سری نگر میں تباہ ہونے والا Mi-17 ہیلی کاپٹر غلطی سے انڈین ایئر فورس کے زمین سے فضا میں مار کرنے والے میزائل کی زد میں آگیا تھا جس پر ایئر آفیسر

کمانڈنگ سری نگر ایئر بیس کو عہدے سے ہٹا دیا گیا تھا۔ یاد رہے کہ 26 فروری کو بھارتی فضائیہ کے طیارے نے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کی اور پاکستانی حدود میں گھس آیا تھا جس کے بعد پاک فضائیہ کے طیاروں کی بر وقت اڑان کے بعد دشمن کا طیارہ بھاگنے پر مجبور ہو گیا تھا۔ پاک فضائیہ نے اس سے اگلے ہی دن بھارتی فضائیہ کے دو لڑاکا طیارے مار گرائے تھے۔ جس کے بعد ایک پائلٹ ابھی نیندن کو گرفتار کیا گیا تھا۔دوسری جانب بھارتی نیوی کا ہیلی کاپٹر سمندر میں گر کر تباہ ہوگیا، حادثے کی وجوہات جاننے کے لیے تحقیقات کا آغاز کردیا گیا۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق بھارتی نیوی نے تصدیق کی ہے کہ گزشتہ ہفتے چیتک ہیلی کاپٹر سمندر میں گر کر تباہ ہوگیا، ہیلی کاپٹر میں سوار تینوں اہلکاروں نے چھلانگ کر اپنی جانیں بچائیں۔ بھارتی بحریہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ چیتک ہیلی کاپٹر بحریہ عرب میں تعینات تھا جس میں معمول کی پرواز کے دوران تکنیکی خرابی پیدا ہوئی، حادثے کی وجوہات جاننے کے لیے کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے۔ رپورٹ کے مطابق 1960 میں فرانس کا تیار کردہ چیتک ہیلی کاپٹر نیوی کے بیڑے میں فرسودہ تصور کیا جاتا ہے، بھارتی نیوی تمام چیتک ہیلی کاپٹرز کے بدلے میں 111 نیول یوٹیلٹی ہیلی کاپٹرز خریدنا چاہتے ہیں جس کے لیے ٹینڈر کا عمل جاری ہے۔بھارتی نیوی چیتک ہیلی کاپٹرز کو ریسیکیو آپریشن میں استعمال کرتی ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ سال اکتوبر میں بھی چیتک ہیلی کاپٹر ممبئی سے چنائی جاتے ہوئے نیول بیس چنائی کے قریب گر کر تباہ ہوگیا تھا۔خیال رہے کہ گزشتہ ماہ بھی بھارتی فضائیہ کا مگ 21 طیارہ راجھستان میں گر کر تباہ ہوگیا تھا، بھارتی وزارت دفاع کا کہنا تھا کہ طیارے کا پائلٹ محفوظ ہے ، ابتدائی تفصیلات کے نتیجے میں معلوم ہوا کہ جہاز پرندہ ٹکرانے کے سبب کریش ہوا ہے۔ یاد رہے کہ 27 فروری کو پاک فضائیہ نے بھارت کے دو طیارے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی پر مار گرائے تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں