Saturday , May 25 2019
ہوم > اسپشیل اسٹوریز > اصحاب کہف کے کتے پر جنت واجب کیوں ہے؟ قرآن میں کتے کو نجس العین تین باتوں کی وجہ سے قرار دیا گیا ہے

اصحاب کہف کے کتے پر جنت واجب کیوں ہے؟ قرآن میں کتے کو نجس العین تین باتوں کی وجہ سے قرار دیا گیا ہے

کتے کی وہ کون سی تین فطرتی ہیں جن کی وجہ سے وہ نجس جانور قرار پایا؟ پہلی فطرت یہ ہے کہ وہ اس وقت جب اللہ تعالیٰ اپنی رحمتوں کا نزول شروع کرتا ہے اور اپنی نعمتوں کی بارش کرتا ہے وہ اس وقت مونھ اوندھ پڑ کر سو جاتا ہے یعنی ساری رات

جاگتا ہے اور نزول رحمت خداوندی کے وقت اس پر نیند کا غلبہ ہو جاتا ہے دوسری فطرت یہ ہے کہ وہ اپنے ہم جنس کو دیکھ کر ہمیشہ بھونکے گا نفرت کا اظہار کرے گا تیسری صورت یہ ہے کہ وہ اپنی غذائی ضرورت پوری کرنے کے بعد بچی غذا زمین میں گڑھا کھود کر اس میں دفن کرتا ہے تاکہ وہ کسی اور کے کام نہ آئے. جس کے بعد میرے ذہن میں یہ بات آئی کہ اگر یہ اتنا ہی نجس جانور ہے تو پھر وہ کتا جو کہ اصحاب الکہف کا کتا تھا، اس کتے کے لئے جنت واجب کیوں قرار دے دی گئی اصحاب الکہف کے قصے سے پتہ چلتا ہے کہ ان کے ہمراہ ایک کتا بھی تھا جو ان کے ساتھ ساتھ رہتا تھا اور ان کی حفاظت کرتا تھا. یہ کتا انکے ساتھ کہاں سے شامل ہوا تھا؟ کیا ان کا شکاری کتا تھا یا اس چرواہے کا کتا تھا جس سے ان کی راستے میں ملاقات ہوئی تھی اور جب اس نے انہیں پہچان لیا تھا تو اس نے اپنے جانور آبادی کی طرف روانہ کردیے تھے اورخود ان پاکباز لوگوں کے ساتھ ہو لیا تھا کیوں کہ وہ حق کی تلاش اور دیدار الہی کا طالب انسان تھا. اس وقت تک ان سے جدا نہ ہوا اور ان کے ساتھ ہولیا. پھر جب جنگ کے وقت دشمن غار کے قریب آئے تو اس کتے نے اپنی فطرت کے مطابق بھونکنا چاہا مگر ایک دم رک گیا اور سر نیچے کرکے بیٹھ گیا. دشمن نے جب دیکھا تو وہاں سے یہ کہتے ہوئے گذر گئی کہ اگر یہاں کوئی ہوتا تو یہ جانور ضرور بھونکتا. اس کتےنے اپنی فطرت کو چھوڑا. یہیں حکم ہوا کہ اس کتے پر جنت واجب ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایک نعمت مانگےتو کیا مانگے

حضرت موسیٰ علیہ السلام نے ایک بار اللہ تعالیٰ سے پوچھا’’ یا باری تعالیٰ انسان …